[PR] Gain and Get More Likes and Followers on Instagram.

zahidakhtar5048 zahidakhtar5048

214 posts   98 followers   49 followings

Zahid Akhtar 

کوئی فال نکال کرشمہ گر ، مری راہ میں پُھول گُلاب آئیں
کوئی پانی پُھونک دے ایسا ، وہ پئے تو میرے خُواب آئیں

اے دوست … ذرا اور قریبِ رگِ جاں ہو
کیا جانے کہاں تک شبِ ہجراں کا دھواں ہو

میں اس کو ترے نام سے تعبیر کروں گا
وہ پھول … جسے قربتِ شبنم بھی گراں ہو
________________زاہد

مر بھی جاؤں میں اگر حسرتِ دیدار کے ساتھ
لگ کے بیٹھوں گا نہ لیکن تیری دیوار کے ساتھ
خون پلایا ہے کھلایا ہے جگر تیری قسم
ہم نے پالا ہے ترے غم کو بڑے پیار کے ساتھ

عشق کیا کوئی اختیار کرے وہی جی مارے جس کو پیار کرے
غنچہ ہے سر پہ داغ سودا کا دیکھیں کب تک یہ گل بہار کرے
آنکھیں پتھرائیں چھاتی پتھر ہے
وہ ہی جانے جو انتظار کرے

بھولے بن کر حال نہ پوچھو بہتے ہیں اشک تو بہنے دو
جس سے بڑھے بے چینی دل کی ایسی تسلی رہنے دو
رسمیں اس اندھیر نگر کی نئی نہیں یہ پرانی ہیں
مہر پہ ڈالو رات کا پردہ ماہ کو روشن رہنے دو
روح نکل کر باغِ جہاں سے باغِ جناں میں جا پہونچے
چہرے پہ اپنے میری نگاہیں اتنی دیر تو رہنے دو
خندۂ گل بلبل میں ہوگا گل میں نغمہ بلبل کا
قصہ ایک ، زبانیں دو ہیں آپ کہو یا کہنے دو
اتنا جنونِ شوق دیا کیوں خوف جو تھا رسوائی کا
بات کرو خود قابلِ شکوہ الٹے مجھ کو رہنے دو

*تو روگ تو دیتا ہے عیادت نہیں کرتا*
*دل پھر بھی کوئی تجھ سے شکایت نہیں کرتا*
*میں نے تو دل و جان تیرے نام کیے ہیں*
*تو نظریں اٹھانے کی بھی زحمت نہیں کرتا* *جو زخم دیئے تونے وہ رکھوں گا سلامت*
*میں پیار کی دولت میں خیانت نہیں کرتا* *وہ منصف ہے اگر جو چاہے سزا دے*
*سچا ہوں مگر اپنی وکالت نہیں کرتا*

افسردگی بھی رخ پہ ہے اُن کے،، نکھار بھی
ہے آج گلستاں میں خزاں بھی،، بہار بھی

آ کر وہ میری لاش پہ یہ کہہ کے رو دیے
تم سے ہوا نہ آج مرا انتظار بھی

ﺑَﮩُﺖ ﺧﺎﻣﻮﺵ ﺭَﮦ ﮐَﺮ ﻭُﮦ ﺻَﺪﺍﺋﯿﮟ
ﻣُﺠﮫ ﮐَﻮ ﺩَﯾﺘﺎ ﺗﮭﺎ،
ﺑَﮍﮮ ﺑﮭَﺮﭘُﻮﺭ ﺟَﺬﺑﻮﮞ ﮐﯽ ﻗَﺒﺎﺋﯿﮟ
ﻣُﺠﮫ ﮐَﻮ ﺩَﯾﺘﺎ ﺗﮭﺎ،
ﻭُﮦ ﺍُﺱ ﮐﯽ ﭼﺎﮨَﺘﯿﮟ ﺑﮭﯽ ﺳﺎﺭﯼ
ﺩُﻧﯿﺎ ﺳﮯ ﺍَﻧﻮﮐﮭﯽ ﺗﮭِﯿﮟ،
ﺭِﯾﺎﺿَﺖ ﺧﻮﺩ ﻭُﮦ ﮐَﺮﺗﺎ ﺗﮭﺎ ﺟَﺰﺍﺋﯿﮟ
ﻣُﺠﮫ ﮐَﻮ ﺩَﯾﺘﺎ ﺗﮭﺎ،
ﺍُﺳﮯ ﻣَﯿﮟ ﺍَﺟﻨَﺒﯽ ﺳَﻤﺠﮭﺎ ﻣَﮕَﺮ ﮨَﺮ ﻣﻮﮌ
ﭘَﺮ،
ﻭُﮦ ﺍَﭘﻨﮯ ﻧﺎﻡ ﮐﯽ ﺳﺎﺭﯼ ﺩُﻋﺎﺋﯿﮟ
ﻣُﺠﮫ ﮐَﻮ ﺩَﯾﺘﺎ ﺗﮭﺎ

خودی کو اس کی اطاعت سے باندھ رکھا ہے
وہ جس نے مجھ کو محبت سے باندھ رکھا ہے
جو ہم سے توڑ کے ناتا چلا گیا تھا کبھی
اسی نے ہم کو عداوت سے باندھ رکھا ہے

ذرا ذراسی بھی حاجت خدا سے کہتا ہوں
دعا نے شوق اجابت سے باندھ رکھا ہے

سمجھ رہے ہیں کئیں لوگ بے زباں ہم کو
زباں کو ہم نے شرافت سے باندھ رکھا ہے

ہمارے دل میں بھی آتے ہیں وسوسے لیکن
شریر دل کو ریاضت سے باندھ رکھا ہے

مجھے نہیں ہے ذراسی بھی حرص دنیا کی
خودی کو میں نے قناعت سے باندھ رکھا ہے

جو چاہتے تو کبھی ہم بھی جھوٹ کہہ دیتے
مگر زباں کو صداقت سے باندھ رکھا ہے

حصول شوق کا مرکز مرا گماں ٹہرا
"گماں نے مجھ کو حقیقت سے باندھ رکھا ہے"

چراغ دل کو فلاحی نے یوں کیا روشن
سیانے دل کو عبادت سے باندھ رکھا ہے
🌹🌹

جو بھی کچھ طاق خیالات پہ رہ جاتے ہیں زیست کے خیمے اسی بات پہ رہ جاتے ہیں
شمع ساعت نے بہت عکس تراشا لیکن
کچھ ہیولے در ظلمات پہ رہ جاتے ہیں
دل نے تو لشکر شاداب سنبھالا ہے مگر خاروخس پھربھی مکانات پہ رہ جاتےہیں
تشنگی ایسی کہ دریا کا لہو پی کر بھی
صبر کے قرض مکافات پہ رہ جاتے ہیں
رقص ناہید سر شاخ تماشہ نہ ہوا آئینےہوش کےجب ہاتھ پہ رہ جاتےہیں
کب تلک سینۂ صد چاک کا ماتم ہو گا سب رکے تیشۂ حالات پہ رہ جاتے ہیں
کیسے تاریخ بنے کوئی حکایت عامرؔ حاشیےآج بھی صفحات پہ رہ جاتےہیں

ﺍُﺱ ﮐﻮ ﻓﺮﺻﺖ ﮨﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﻭﻗﺖ ﻧﮑﺎﻟﮯ ﻣﺤﺴﻦؔ
ﺍَﯾﺴﮯ ﮨﻮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺑﮭﻼ ........ﭼﺎﮨﻨﮯ ﻭﺍﻟﮯ ﻣﺤﺴﻦ
ﯾﺎﺩ ﮐﮯ ﺩَﺷﺖ ﻣﯿﮟ ﭘﮭﺮﺗﺎ ﮨﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﻧﻨﮕﮯ ﭘﺎﺅﮞ
ﺩﯾﮑﮫ ﺗﻮ ﺁ ﮐﮯ ﮐﺒﮭﯽ ــ ﭘﺎﺅﮞ ﮐﮯ ﭼﮭﺎﻟﮯ ﻣﺤﺴﻦؔ
ﮐﮭﻮ ﮔﺌﯽ ﺻُﺒﺢ ﮐﯽ ﺍُﻣﯿﺪ ـ..... ـ ـ ﺍﻭﺭ ﺍَﺏ ﻟﮕﺘﺎ ﮨﮯ
ﮨﻢ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮﮞ ﮔﮯ ــ ﮐﮧ ﺟﺐ ﮨﻮﮞ ﮔﮯ ﺍُﺟﺎﻟﮯ ﻣﺤﺴﻦؔ
ﺧﺎﮎ ﮐﻮ ﺑﮭﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﭘﮩﻨﭽﮯ ﮔﺎ ﮐﻮﺋﯽ ﮐﺮﺑﻞ ﮐﯽ
ﺍَﺏ ﺑﮭﻠﮯ ﺍﯾﮏ ﺟﮩﺎﮞ ﺧﻮﻥ ﻣﯿﮟ ﻧﮩﺎ ﻟﮯ ﻣﺤﺴﻦ
ﻣﯿﮟ ﮐﮩﺎﮞ ؟ﺣﺎﮐﻢ ﻭﻗﺖ ﮐﮩﺎﮞ ؟... ﻋﺪﻝ ﮐﮩﺎﮞ؟؟ ﮐﯿﻮﮞ ﻧﺎﺧﻠﻘﺖ ﮐﯽ ﺯﺑﺎﻥ ﭘﺮ ﻟﮕﺎﺋﯿﮟ ﺗﺎﻟﮯ ﻣﺤﺴﻦؔ
ﻭﮦ ﺍِﮎ ﺷﺨﺺ ﻣﺘﺎﻉِ ﺩِﻝ ﻭ ﺟﺎﻥ ﺗﮭﺎ ـ ـ... ـ ﻧﮧ ﺭﮨﺎ
ﺍَﺏ ﺑﮭﻼ ﮐﻮﻥ ....... ﻣﯿﺮﮮ ﺩَﺭﺩ ﺳﻨﺒﮭﺎﻟﮯ ﻣﺤﺴﻦ

آنکھوں میں آنسوؤں کو ابھرنے نہیں دیا​
مٹی میں موتیوں کو بکھرنے نہیں دیا​

جس راہ پر پڑے تھے ترے پاؤں کے نشاں​
اس راہ سے کسی کو گزرنے نہیں دیا​

چاہا تو چاہتوں کی حدوں سے گزر گئے​
نشہ محبتوں کا اترنے نہیں دیا​

ہر بار ہے نیا ترے ملنے کا ذائقہ​
ایسا ثمر کسی بھی شجر نے نہیں دیا​

اتنے بڑے جہان میں جائے گا تو کہاں​
اس اک خیال نے مجھے مرنے نہیں دیا​

ساحل دکھائی دے تو رہا تھا بہت قریب​
کشتی کو راستہ ہی بھنور نے نہیں دیا​

جتنا سکوں ملا ہے ترے ساتھ راہ میں​
اتنا سکون تو مجھے گھر نے نہیں دیا​

اس نے ہنسی ہنسی میں محبت کی بات کی​
میں نے عدیم اس کو مکرنے نہیں دیا​

Most Popular Instagram Hashtags